Webhosting in Pakistan
Results 1 to 10 of 10

Thread: بائیں کروٹ سونے کے فائدے جو آج سے پہلے آپ بھ&#

  1. #1
    Join Date
    09 Jul 2018
    Location
    Lahore
    Age
    25
    Gender
    Male
    Posts
    52
    Threads
    2
    Credits
    257
    Thanked
    0

    Post بائیں کروٹ سونے کے فائدے جو آج سے پہلے آپ بھ&#

    Webhosting in Pakistan
    رات کو بستر پر سونے کا انداز انسانی زندگی پر گہرا اثررکھتا ہے، ہم نے اکثر اپنے بزرگوں اور بڑوں کو کہتے سنا ہے کہ دائیں کروٹ سے سونا چاہیے مگر بائیں کروٹ سونے کے بھی کئی فائدے ہیں جن سے ہم آج تک لا علم تھے۔

    نظامِ ہضم میں تیزی اکثر لوگوں کو معدے کی کئی شکایات کا سامنا ہوتا ہے جن میں پیٹ بھاری رہنا،قبض اور متلی آنا شامل ہے۔ جدید سائنسی تحقیق کے مطابق بائیں کروٹ سے سونا ہاضمے کوبہتر اور تیز بناتا ہے کیونکہ معدہ بائیں جانب ہوتا ہے اور جب ہم سوتے ہیں تو معدے سے ہماری غذا باآسانی آنتوں میں منتقل ہوجاتی ہے جس سے نظامِ ہضم بہترین انداز میں کام کرنے لگ جاتا ہے۔

    سینے کی جلن سے نجات ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سینے کی جلن میں کمی آتی ہےاس سے ہمارے معدے میں پائے جانے والے کیمیکلزمعدے کی اوپری سطح سے حلق میں نہیں آپاتےاور سینے کی جلن نہیں ہوتی۔

    خون کی روانی ہمارا دل ایک ایسا اعضا ہے جو 24 گھنٹے مسلسل مشقت کرتا رہتا ہےلیکن اگر اس کا خیال نہ رکھا جائے تو کئی جان لیوا بیماریاں دستک دینے لگ جاتی ہیں۔ پورے جسم کوصحیح طور پہ خون کی فراہمی کے لیے ضروری ہے کہ رات میں اس کےکام میں دشواری نہ پیدا کی جائے۔ بائیں کروٹ سے سونے کی وجہ سے دل کے شریانوں کو خون کی روانگی میں زیادہ طاقت اور زور آزمائی نہیں کرنی پڑتی جس سے دل ہمیشہ جوان رہتا ہے اور تمام اعضاء تک باآسانی خون پہنچاتا رہتا ہے۔

    کمر کے درد میں آرام بعض لوگوں کو شکایت ہوتی ہے کہ 8 گھنٹے کی نیند کے باوجو وہ صبح خود کو بوجھل اور تھکا ہو ا محسوس کرتے ہیں جبکہ کچھ لوگوں کو کمر اور کندھوں کے درد کی شکایت پریشان کرتی رہتی ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق بائیں کروٹ سونے سے کمر پر زور نہیں پڑتا اور پٹھوں میں کچھائومیں بھی کمی آتی ہے۔

    حاملہ خواتین کی بہتر صحت خواتین کو دوران ِحمل کئ پیچیدگیوں کا سامنا ہوتا ہے جن میں ایک نیند میں بے آرامی ،ہائی بلڈ پریشر اورجسم کے مختلف حصوں میں درد ہونا شامل ہے۔ ماہرین ِصحت کے مطابق حاملہ خوتین کی نیند میںجتنا کم سے کم خلل پیدا ہو اتنی ہی ان کی صحت اچھی رہے گی۔بائیں کروٹ سونے سے نہ صرف بلڈ پریشر کی پریشانی واقع نہیں ہوتی بلکہ کمردرد میں بھی کمی آتی ہے۔

    خراٹوں سے چھٹکارا اگر آپ بھی اپنی یا اپنے ساتھی کی خراٹے لینے کی عادت سے پریشان ہیں تو اب آپ پُرسکون نیند کا مزہ ضرور لے پائیں گے۔ نیند میں ہماری زبان،حلق اور تالو مکمل آرام کی حالت میں ہوتے ہیںاور سانس لینے کو دوران ہوا کے دبائو سے منہ کھل جانے کے باعث خراٹوں کی صورت پیدا ہوجاتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سانس کی نالیوں میں روانگی پیدا ہوتی ہے اور ہوا کا دبائو پیدا نہیں ہوتا جس سے خراٹوں کی شکایت بھی پیدا نہیں ہوتی۔

  2. #2
    zjankhoso is offline Senior Member+
    Last Online
    27th April 2019 @ 08:32 PM
    Join Date
    31 Oct 2013
    Location
    nawabshah sindh
    Gender
    Male
    Posts
    38
    Threads
    1
    Credits
    199
    Thanked: 1

    Default

    Quote saleemsaif1993 said: View Post
    رات کو بستر پر سونے کا انداز انسانی زندگی پر گہرا اثررکھتا ہے، ہم نے اکثر اپنے بزرگوں اور بڑوں کو کہتے سنا ہے کہ دائیں کروٹ سے سونا چاہیے مگر بائیں کروٹ سونے کے بھی کئی فائدے ہیں جن سے ہم آج تک لا علم تھے۔

    نظامِ ہضم میں تیزی اکثر لوگوں کو معدے کی کئی شکایات کا سامنا ہوتا ہے جن میں پیٹ بھاری رہنا،قبض اور متلی آنا شامل ہے۔ جدید سائنسی تحقیق کے مطابق بائیں کروٹ سے سونا ہاضمے کوبہتر اور تیز بناتا ہے کیونکہ معدہ بائیں جانب ہوتا ہے اور جب ہم سوتے ہیں تو معدے سے ہماری غذا باآسانی آنتوں میں منتقل ہوجاتی ہے جس سے نظامِ ہضم بہترین انداز میں کام کرنے لگ جاتا ہے۔

    سینے کی جلن سے نجات ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سینے کی جلن میں کمی آتی ہےاس سے ہمارے معدے میں پائے جانے والے کیمیکلزمعدے کی اوپری سطح سے حلق میں نہیں آپاتےاور سینے کی جلن نہیں ہوتی۔

    خون کی روانی ہمارا دل ایک ایسا اعضا ہے جو 24 گھنٹے مسلسل مشقت کرتا رہتا ہےلیکن اگر اس کا خیال نہ رکھا جائے تو کئی جان لیوا بیماریاں دستک دینے لگ جاتی ہیں۔ پورے جسم کوصحیح طور پہ خون کی فراہمی کے لیے ضروری ہے کہ رات میں اس کےکام میں دشواری نہ پیدا کی جائے۔ بائیں کروٹ سے سونے کی وجہ سے دل کے شریانوں کو خون کی روانگی میں زیادہ طاقت اور زور آزمائی نہیں کرنی پڑتی جس سے دل ہمیشہ جوان رہتا ہے اور تمام اعضاء تک باآسانی خون پہنچاتا رہتا ہے۔

    کمر کے درد میں آرام بعض لوگوں کو شکایت ہوتی ہے کہ 8 گھنٹے کی نیند کے باوجو وہ صبح خود کو بوجھل اور تھکا ہو ا محسوس کرتے ہیں جبکہ کچھ لوگوں کو کمر اور کندھوں کے درد کی شکایت پریشان کرتی رہتی ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق بائیں کروٹ سونے سے کمر پر زور نہیں پڑتا اور پٹھوں میں کچھائومیں بھی کمی آتی ہے۔

    حاملہ خواتین کی بہتر صحت خواتین کو دوران ِحمل کئ پیچیدگیوں کا سامنا ہوتا ہے جن میں ایک نیند میں بے آرامی ،ہائی بلڈ پریشر اورجسم کے مختلف حصوں میں درد ہونا شامل ہے۔ ماہرین ِصحت کے مطابق حاملہ خوتین کی نیند میںجتنا کم سے کم خلل پیدا ہو اتنی ہی ان کی صحت اچھی رہے گی۔بائیں کروٹ سونے سے نہ صرف بلڈ پریشر کی پریشانی واقع نہیں ہوتی بلکہ کمردرد میں بھی کمی آتی ہے۔

    خراٹوں سے چھٹکارا اگر آپ بھی اپنی یا اپنے ساتھی کی خراٹے لینے کی عادت سے پریشان ہیں تو اب آپ پُرسکون نیند کا مزہ ضرور لے پائیں گے۔ نیند میں ہماری زبان،حلق اور تالو مکمل آرام کی حالت میں ہوتے ہیںاور سانس لینے کو دوران ہوا کے دبائو سے منہ کھل جانے کے باعث خراٹوں کی صورت پیدا ہوجاتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سانس کی نالیوں میں روانگی پیدا ہوتی ہے اور ہوا کا دبائو پیدا نہیں ہوتا جس سے خراٹوں کی شکایت بھی پیدا نہیں ہوتی۔

    میرے بھائی دائیں کروٹ سے سونا سنت ھے مطلب عبادت ھے

  3. #3
    Join Date
    09 Apr 2009
    Location
    کر&
    Gender
    Male
    Posts
    14,718
    Threads
    236
    Credits
    15,737
    Thanked
    1597

    Default

    دوستوں السلام علیکم
    حضرت براء بن عاذب ؓ نے فرمایا کہ رسول اکرم ﷺ جب بستر پر آتے تو داہنی کروٹ پر سوتے تھے (بخاری شریف و ترمذی)۔
    حضور ﷺ عام طور پر دائیں کروٹ پر آرام فرماتے تھے اور دایاں ہاتھ داہنے رخسار کے نیچے ہوتا ۔
    یہ تھا طریقہ نبی کریم ﷺ کے سونے کا اوراسی کی ترغیب آپ ﷺ نے صحابہ اکرام کو دی تھی ۔
    یہ تو تھی ایک سنت
    دوسری یہ ہے کہ جس طرح مسلمان کو قبر لیٹایا جاتا ہے اُس طرح لیٹا جائے تو اور اچھی بات ہوگی
    کیونکہ اس طرح لیٹنے / سونےسے دونوں سنتیں پوری ہوجائیں گی

    لیکن واضح رہے کہ یہ دونوں چیزیں سنن زوائد میں سے ہیں، جن کے ترک پر کوئی گناہ لازم نہیں آتا۔

    اگر وضو کر کے سوئیں تو اور اچھی بات ہے

    سائنس کچھ بھی کر لے وہ طریقہ سنت سے بہتر نہیں ہوسکتی نا ہوگی کبھی
    اللہ پاک ہم سب کا خاتمہ ایمان پر فرمائے آمین

  4. #4
    phamyen is offline Junior Member
    Last Online
    13th May 2019 @ 09:37 AM
    Join Date
    20 Sep 2018
    Age
    28
    Gender
    Female
    Posts
    8
    Threads
    0
    Credits
    82
    Thanked
    0

    Default

    great post. i like it. feeling great when reading your post
    the impossible quiz

  5. #5
    Join Date
    16 Aug 2009
    Location
    Makkah , Saudia
    Gender
    Male
    Posts
    16,344
    Threads
    280
    Credits
    74,155
    Thanked
    879

    Default

    Thanks for Sharing

  6. #6
    leezuka389's Avatar
    leezuka389 is offline Advance Member
    Last Online
    17th May 2019 @ 08:25 AM
    Join Date
    04 Nov 2015
    Gender
    Male
    Posts
    3,744
    Threads
    31
    Credits
    17,772
    Thanked
    215

    Default

    [QUOTE=saleemsaif1993;5936790]رات کو بستر پر سونے کا انداز انسانی زندگی پر گہرا اثررکھتا ہے، ہم نے اکثر اپنے بزرگوں اور بڑوں کو کہتے سنا ہے کہ دائیں کروٹ سے سونا چاہیے مگر بائیں کروٹ سونے کے بھی کئی فائدے ہیں جن سے ہم آج تک لا علم تھے۔

    نظامِ ہضم میں تیزی اکثر لوگوں کو معدے کی کئی شکایات کا سامنا ہوتا ہے جن میں پیٹ بھاری رہنا،قبض اور متلی آنا شامل ہے۔ جدید سائنسی تحقیق کے مطابق بائیں کروٹ سے سونا ہاضمے کوبہتر اور تیز بناتا ہے کیونکہ معدہ بائیں جانب ہوتا ہے اور جب ہم سوتے ہیں تو معدے سے ہماری غذا باآسانی آنتوں میں منتقل ہوجاتی ہے جس سے نظامِ ہضم بہترین انداز میں کام کرنے لگ جاتا ہے۔

    سینے کی جلن سے نجات ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سینے کی جلن میں کمی آتی ہےاس سے ہمارے معدے میں پائے جانے والے کیمیکلزمعدے کی اوپری سطح سے حلق میں نہیں آپاتےاور سینے کی جلن نہیں ہوتی۔

    خون کی روانی ہمارا دل ایک ایسا اعضا ہے جو 24 گھنٹے مسلسل مشقت کرتا رہتا ہےلیکن اگر اس کا خیال نہ رکھا جائے تو کئی جان لیوا بیماریاں دستک دینے لگ جاتی ہیں۔ پورے جسم کوصحیح طور پہ خون کی فراہمی کے لیے ضروری ہے کہ رات میں اس کےکام میں دشواری نہ پیدا کی جائے۔ بائیں کروٹ سے سونے کی وجہ سے دل کے شریانوں کو خون کی روانگی میں زیادہ طاقت اور زور آزمائی نہیں کرنی پڑتی جس سے دل ہمیشہ جوان رہتا ہے اور تمام اعضاء تک باآسانی خون پہنچاتا رہتا ہے۔

    کمر کے درد میں آرام بعض لوگوں کو شکایت ہوتی ہے کہ 8 گھنٹے کی نیند کے باوجو وہ صبح خود کو بوجھل اور تھکا ہو ا محسوس کرتے ہیں جبکہ کچھ لوگوں کو کمر اور کندھوں کے درد کی شکایت پریشان کرتی رہتی ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق بائیں کروٹ سونے سے کمر پر زور نہیں پڑتا اور پٹھوں میں کچھائومیں بھی کمی آتی ہے۔

    حاملہ خواتین کی بہتر صحت خواتین کو دوران ِحمل کئ پیچیدگیوں کا سامنا ہوتا ہے جن میں ایک نیند میں بے آرامی ،ہائی بلڈ پریشر اورجسم کے مختلف حصوں میں درد ہونا شامل ہے۔ ماہرین ِصحت کے مطابق حاملہ خوتین کی نیند میںجتنا کم سے کم خلل پیدا ہو اتنی ہی ان کی صحت اچھی رہے گی۔بائیں کروٹ سونے سے نہ صرف بلڈ پریشر کی پریشانی واقع نہیں ہوتی بلکہ کمردرد میں بھی کمی آتی ہے۔

    خراٹوں سے چھٹکارا اگر آپ بھی اپنی یا اپنے ساتھی کی خراٹے لینے کی عادت سے پریشان ہیں تو اب آپ پُرسکون نیند کا مزہ ضرور لے پائیں گے۔ نیند میں ہماری زبان،حلق اور تالو مکمل آرام کی حالت میں ہوتے ہیںاور سانس لینے کو دوران ہوا کے دبائو سے منہ کھل جانے کے باعث خراٹوں کی صورت پیدا ہوجاتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سانس کی نالیوں میں روانگی پیدا ہوتی ہے اور ہوا کا دبائو پیدا نہیں ہوتا جس سے خراٹوں کی شکایت بھی پیدا نہیں ہوتی




    umda sharing hai

  7. #7
    mianusman11 is offline Junior Member
    Last Online
    11th April 2019 @ 12:58 PM
    Join Date
    16 Oct 2014
    Gender
    Male
    Posts
    17
    Threads
    0
    Credits
    60
    Thanked
    0

    Default

    great

  8. #8
    waqasshahid's Avatar
    waqasshahid is offline Senior Member+
    Last Online
    7th May 2019 @ 05:29 PM
    Join Date
    24 Jan 2014
    Gender
    Male
    Posts
    318
    Threads
    48
    Credits
    2,390
    Thanked
    38

    Default

    Quote saleemsaif1993 said: View Post
    رات کو بستر پر سونے کا انداز انسانی زندگی پر گہرا اثررکھتا ہے، ہم نے اکثر اپنے بزرگوں اور بڑوں کو کہتے سنا ہے کہ دائیں کروٹ سے سونا چاہیے مگر بائیں کروٹ سونے کے بھی کئی فائدے ہیں جن سے ہم آج تک لا علم تھے۔

    نظامِ ہضم میں تیزی اکثر لوگوں کو معدے کی کئی شکایات کا سامنا ہوتا ہے جن میں پیٹ بھاری رہنا،قبض اور متلی آنا شامل ہے۔ جدید سائنسی تحقیق کے مطابق بائیں کروٹ سے سونا ہاضمے کوبہتر اور تیز بناتا ہے کیونکہ معدہ بائیں جانب ہوتا ہے اور جب ہم سوتے ہیں تو معدے سے ہماری غذا باآسانی آنتوں میں منتقل ہوجاتی ہے جس سے نظامِ ہضم بہترین انداز میں کام کرنے لگ جاتا ہے۔

    سینے کی جلن سے نجات ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سینے کی جلن میں کمی آتی ہےاس سے ہمارے معدے میں پائے جانے والے کیمیکلزمعدے کی اوپری سطح سے حلق میں نہیں آپاتےاور سینے کی جلن نہیں ہوتی۔

    خون کی روانی ہمارا ’دل‘ ایک ایسا اعضا ہے جو 24 گھنٹے مسلسل مشقت کرتا رہتا ہےلیکن اگر اس کا خیال نہ رکھا جائے تو کئی جان لیوا بیماریاں دستک دینے لگ جاتی ہیں۔ پورے جسم کوصحیح طور پہ خون کی فراہمی کے لیے ضروری ہے کہ رات میں اس کےکام میں دشواری نہ پیدا کی جائے۔ بائیں کروٹ سے سونے کی وجہ سے دل کے شریانوں کو خون کی روانگی میں زیادہ طاقت اور زور آزمائی نہیں کرنی پڑتی جس سے دل ہمیشہ جوان رہتا ہے اور تمام اعضاء تک باآسانی خون پہنچاتا رہتا ہے۔

    کمر کے درد میں آرام بعض لوگوں کو شکایت ہوتی ہے کہ 8 گھنٹے کی نیند کے باوجو وہ صبح خود کو بوجھل اور تھکا ہو ا محسوس کرتے ہیں جبکہ کچھ لوگوں کو کمر اور کندھوں کے درد کی شکایت پریشان کرتی رہتی ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق بائیں کروٹ سونے سے کمر پر زور نہیں پڑتا اور پٹھوں میں کچھائومیں بھی کمی آتی ہے۔

    حاملہ خواتین کی بہتر صحت خواتین کو دوران ِحمل کئ پیچیدگیوں کا سامنا ہوتا ہے جن میں ایک نیند میں بے آرامی ،ہائی بلڈ پریشر اورجسم کے مختلف حصوں میں درد ہونا شامل ہے۔ ماہرین ِصحت کے مطابق حاملہ خوتین کی نیند میںجتنا کم سے کم خلل پیدا ہو اتنی ہی ان کی صحت اچھی رہے گی۔بائیں کروٹ سونے سے نہ صرف بلڈ پریشر کی پریشانی واقع نہیں ہوتی بلکہ کمردرد میں بھی کمی آتی ہے۔

    خراٹوں‘ سے چھٹکارا اگر آپ بھی اپنی یا اپنے ساتھی کی خراٹے لینے کی عادت سے پریشان ہیں تو اب آپ پُرسکون نیند کا مزہ ضرور لے پائیں گے۔ نیند میں ہماری زبان،حلق اور تالو مکمل آرام کی حالت میں ہوتے ہیںاور سانس لینے کو دوران ہوا کے دبائو سے منہ کھل جانے کے باعث خراٹوں کی صورت پیدا ہوجاتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بائیں کروٹ سونے سے سانس کی نالیوں میں روانگی پیدا ہوتی ہے اور ہوا کا دبائو پیدا نہیں ہوتا جس سے خراٹوں کی شکایت بھی پیدا نہیں ہوتی۔
    بہت اچھی معلومات ہمارے ساتھ بانٹنے کا شکریہ

    - - - Updated - - -

    Quote Haseeb Alamgir said: View Post
    دوستوں السلام علیکم
    حضرت براء بن عاذب ؓ نے فرمایا کہ رسول اکرم ﷺ جب بستر پر آتے تو داہنی کروٹ پر سوتے تھے (بخاری شریف و ترمذی)۔
    حضور ﷺ عام طور پر دائیں کروٹ پر آرام فرماتے تھے اور دایاں ہاتھ داہنے رخسار کے نیچے ہوتا ۔
    یہ تھا طریقہ نبی کریم ﷺ کے سونے کا اوراسی کی ترغیب آپ ﷺ نے صحابہ اکرام کو دی تھی ۔
    یہ تو تھی ایک سنت
    دوسری یہ ہے کہ جس طرح مسلمان کو قبر لیٹایا جاتا ہے اُس طرح لیٹا جائے تو اور اچھی بات ہوگی
    کیونکہ اس طرح لیٹنے / سونےسے دونوں سنتیں پوری ہوجائیں گی

    لیکن واضح رہے کہ یہ دونوں چیزیں سنن زوائد میں سے ہیں، جن کے ترک پر کوئی گناہ لازم نہیں آتا۔

    اگر وضو کر کے سوئیں تو اور اچھی بات ہے

    سائنس کچھ بھی کر لے وہ طریقہ سنت سے بہتر نہیں ہوسکتی نا ہوگی کبھی
    اللہ پاک ہم سب کا خاتمہ ایمان پر فرمائے آمین
    ﷺﷺﷺﷺﷺﷺ
    استاد سب سے بڑا شاگرد ہوتاہے۔

  9. The Following User Says Thank You to waqasshahid For This Useful Post:

    Haseeb Alamgir (14th April 2019)

  10. #9
    Join Date
    09 Apr 2009
    Location
    کر&
    Gender
    Male
    Posts
    14,718
    Threads
    236
    Credits
    15,737
    Thanked
    1597

    Default

    بہت شکریہ

  11. #10
    lasharig is offline Member
    Last Online
    12th May 2019 @ 03:09 AM
    Join Date
    12 May 2019
    Gender
    Male
    Posts
    51
    Threads
    0
    Credits
    234
    Thanked
    0

    Default

    Webhosting in Pakistan
    sai hy sir g good

Similar Threads

  1. Replies: 37
    Last Post: 16th October 2016, 04:13 AM
  2. Replies: 3
    Last Post: 29th September 2016, 12:32 AM
  3. Replies: 4
    Last Post: 16th July 2016, 02:56 AM
  4. Replies: 0
    Last Post: 21st December 2011, 12:18 AM
  5. Replies: 20
    Last Post: 11th May 2011, 12:19 PM

Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •