Webhosting in Pakistan
Results 1 to 8 of 8

Thread: interested knowledge.

  1. #1
    Izhar Ahmad Asad is offline Junior Member
    Last Online
    6th July 2020 @ 12:41 PM
    Join Date
    26 Nov 2017
    Gender
    Male
    Posts
    6
    Threads
    3
    Credits
    76
    Thanked
    3

    Default interested knowledge.

    Webhosting in Pakistan
    غور سے پڑھیے گا

    امریکی تاریخ کی عجیب خودکشی !!!

    رونالڈ أوبوس نام کے شخص نے خودکشی کرنی چاہی تو سب سے آسان طریقہ استعمال کیا اور وہ یہ کہ اس عمارت سے چھلانگ لگا دے جسمیں وہ رہتا تھا۔ اس نے عمارت کی دسویں منزل سے چھلانگ لگا دی اور اپنوں کے لیے خط چھوڑا جسمیں اس نے خودکشی کا وجہ یہ بتائی کہ وہ زندگی سے مایوس ہو گیا تھا۔
    لیکن 23 مارچ 1994 کو جب پوسٹ مارٹم رپورٹ آئی تو پتہ چلا کہ رونالڈ کی موت کی وجہ چھت سے گرنے سے نہیں بلکہ سر پر گولی لگنے سے ہوئی ہے۔
    جب تحقیق ہوئی تو پتہ چلا کہ رونالڈ کو گولی اسی عمارت سے لگی ہے جسمیں وہ رہتا تھا اور وہ گولی نویں منزل سے چلائی گئی تھی اور اس نویں منزل میں دو بوڑھے میاں بیوی کئی سالوں سے رہ رہے تھے۔
    اور ہمسایوں سے معلوم ہوا کہ دونوں میاں بیوی آپس میں ہر وقت لڑتے جھگڑتے تھے اور عجیب بات یہ تھی کہ جب رونالڈ نے چھت پر سے اپنے آپ کو پھینکا تو عین اسی وقت بوڑھا شوہر پستول تھامے اپنی بیوی کو جان سے مارنے کی دھمکی دے رہاتھا۔
    شدید غصے و ہیجان کی حالت میں شوہر نے غیر ارادی طور پر اپنی بیوی پر گولی چلائی لیکن چونکہ بیوی نشانے سے دور تھی اسلیئے گولی اس وقت کھڑکی سے نکلی اور عین اسوقت جب رونالڈ نے خودکشی کے لیے چھلانگ لگائی جس سے وہ گولی اسکے سر میں لگی ،جس کی وجہ سے اسکی موت واقع ہوئی۔
    (کہانی میں ٹوِسٹ ابھی باقی ہے)

    عدالت میں بوڑھے شوہر پر غیر ارادی طور پر قتل کا مقدمہ چلا لیکن وہ اس بات پر اصرار کرتا رہا کہ وہ میاں بیوی ہر وقت لڑتے رہتے ہیں اور وہ ہر وقت اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں بھی دیتا ہے لیکن پستول ہر وقت فارغ ہی رہتا ہے اسمیں گولیاں نہیں ہوتیں۔
    مزید تحقیقات کرنے پر عجیب بات یہ معلوم ہوئی کہ بوڑھے جوڑے کے رشتہ داروں میں سے کسی نے ایک ہفتہ قبل ان میاں بیوی کے بیٹے کو پستول میں گولیاں ڈالتے دیکھا تھا ۔ وجہ اسکی یہ تھی کہ ماں نے بیٹے کو مالی امداد دینے سے منع کر دیا تھا۔ تو بیٹے نے بوڑھے ماں باپ سے جان چھڑانے کی سوجھی۔ وہ جانتا تھا کہ اس کے والدین ہر وقت لڑتے رہتے ہیں اور لڑتے ہوئے وہ خالی پستول ماں پر تھان لیتا ہے اسلیئے اس نے پستول میں گولی لوڈ کی تاکہ وہ ایک تیر سے دو شکار کرے۔
    لیکن گولی اسکی ماں کو نہ لگی اور وہ رونالڈ کے سر میں اسوقت لگی جب وہ خودکشی کر رہا تھا۔ اور اسطرح قتل کی تہمت کا مقدمہ باپ سے ہٹ کر بیٹے پر جا لگا۔
    (حیران ہو گئے۔۔ عقل گھوم گئی۔۔ اچھا اب میرے ساتھ کہانی پر نظر رکھو)
    ساری واقعے میں سب سے عجیب بات یہ کہ رونالڈ بذات خود ان دونوں بوڑھے میاں بیوی کا بیٹا تھا اور اس نے ہی پستول میں گولی ڈالی تھی تاکہ وہ اپنے ماں باپ سے خلاصی پا سکے۔
    لیکن مالی حالات خراب ہونے اور باپ کا اسکی ماں کو مارنے میں تاخیر کرنے کی وجہ سے اس نے خودکشی کا فیصلہ کیا اور اوپری منزل سے چھلانگ لگاتے ہوئے وہی گولی اسکو لگی جو اس نے خود پستول میں ڈالی تھی اس طرح وہ بذات خود قاتل بھی ہوا اور مقتول بھی۔

    پوسٹ پسند نہیں آ ئی تو پوسٹ کو چھوڑ کر چپ چاپ آ گے بڑھ جائیے ۔۔۔ پسند آ ئی ہو تو حوصلہ افزائی کیلئے اچھا کمنٹ کیجئے

  2. #2
    Haseeb Alamgir's Avatar
    Haseeb Alamgir is offline Moderator
    Last Online
    30th July 2020 @ 03:51 PM
    Join Date
    09 Apr 2009
    Location
    کر&
    Gender
    Male
    Posts
    16,177
    Threads
    256
    Credits
    23,511
    Thanked
    1804

    Default

    کمنٹ تو بنتا ہے
    پر یہ آپ کو اچھا لگے گا یا بُرا اس کی کوئی گارنٹی نہیں ہے
    خیر گارنٹی تو کسی کی بھی نہیں ہے
    کیونکہ
    نہ جانے کون کب اِدھر سےاُدھر ہو جائے
    ارے ارے روکیں
    مراد
    تھی اس جہانِ فانی سے کوچ کر جائے
    اَب
    یہ بھی نہیں کہا جاسکتا ہےکہ معاملہ
    رونالڈ أوبوس
    جیسا ہو
    یا
    نا
    بھی ہو
    خیر آپ کی طرف سے مذید شئیرینگ کا انتظار رہے گا
    اور
    اگلی بار اس طرح کی شئیرینگ
    http://www.itdunya.com/forumdisplay....nd-Discussions
    اس جگہ پوسٹ کیجے گا

  3. #3
    Baazigar's Avatar
    Baazigar is offline V.I.P
    Last Online
    2nd August 2020 @ 10:16 PM
    Join Date
    16 Aug 2009
    Location
    Makkah , Saudia
    Gender
    Male
    Posts
    21,444
    Threads
    285
    Credits
    96,717
    Thanked
    963

    Default

    Thanks for Sharing

  4. #4
    Akhtar170 is offline Advance Member
    Last Online
    16th July 2020 @ 10:40 AM
    Join Date
    12 Oct 2013
    Age
    25
    Gender
    Male
    Posts
    1,021
    Threads
    92
    Credits
    235
    Thanked
    23

    Default

    Wah wah wah.
    ye signature kia hai?

  5. #5
    Haseeb Alamgir's Avatar
    Haseeb Alamgir is offline Moderator
    Last Online
    30th July 2020 @ 03:51 PM
    Join Date
    09 Apr 2009
    Location
    کر&
    Gender
    Male
    Posts
    16,177
    Threads
    256
    Credits
    23,511
    Thanked
    1804

    Default

    کہاں ہو
    Izhar Ahmad Asad
    ڈھونڈرہیں ہیں نگاہیں اور اس تھریڈ میں دی گئیں پوسٹس

  6. #6
    Izhar Ahmad Asad is offline Junior Member
    Last Online
    6th July 2020 @ 12:41 PM
    Join Date
    26 Nov 2017
    Gender
    Male
    Posts
    6
    Threads
    3
    Credits
    76
    Thanked
    3

    Default

    جی بھائی جان

  7. #7
    Maryam Kiani is offline Junior Member
    Last Online
    28th July 2020 @ 02:53 AM
    Join Date
    05 Jul 2020
    Age
    18
    Gender
    Female
    Posts
    16
    Threads
    3
    Credits
    145
    Thanked
    4

    Default

    ye post kafii informative ha hamare leye in dino ma ye jo halat ha corona ky waja se....thanks for posting this type of tread.

  8. #8
    leezuka389's Avatar
    leezuka389 is offline Advance Member
    Last Online
    Yesterday @ 11:35 PM
    Join Date
    04 Nov 2015
    Gender
    Male
    Posts
    5,173
    Threads
    35
    Credits
    31,341
    Thanked
    278

    Default

    Webhosting in Pakistan
    [QUOTE=Izhar Ahmad Asad;5962030]غور سے پڑھیے گا

    امریکی تاریخ کی عجیب خودکشی !!!

    رونالڈ أوبوس نام کے شخص نے خودکشی کرنی چاہی تو سب سے آسان طریقہ استعمال کیا اور وہ یہ کہ اس عمارت سے چھلانگ لگا دے جسمیں وہ رہتا تھا۔ اس نے عمارت کی دسویں منزل سے چھلانگ لگا دی اور اپنوں کے لیے خط چھوڑا جسمیں اس نے خودکشی کا وجہ یہ بتائی کہ وہ زندگی سے مایوس ہو گیا تھا۔
    لیکن 23 مارچ 1994 کو جب پوسٹ مارٹم رپورٹ آئی تو پتہ چلا کہ رونالڈ کی موت کی وجہ چھت سے گرنے سے نہیں بلکہ سر پر گولی لگنے سے ہوئی ہے۔
    جب تحقیق ہوئی تو پتہ چلا کہ رونالڈ کو گولی اسی عمارت سے لگی ہے جسمیں وہ رہتا تھا اور وہ گولی نویں منزل سے چلائی گئی تھی اور اس نویں منزل میں دو بوڑھے میاں بیوی کئی سالوں سے رہ رہے تھے۔
    اور ہمسایوں سے معلوم ہوا کہ دونوں میاں بیوی آپس میں ہر وقت لڑتے جھگڑتے تھے اور عجیب بات یہ تھی کہ جب رونالڈ نے چھت پر سے اپنے آپ کو پھینکا تو عین اسی وقت بوڑھا شوہر پستول تھامے اپنی بیوی کو جان سے مارنے کی دھمکی دے رہاتھا۔
    شدید غصے و ہیجان کی حالت میں شوہر نے غیر ارادی طور پر اپنی بیوی پر گولی چلائی لیکن چونکہ بیوی نشانے سے دور تھی اسلیئے گولی اس وقت کھڑکی سے نکلی اور عین اسوقت جب رونالڈ نے خودکشی کے لیے چھلانگ لگائی جس سے وہ گولی اسکے سر میں لگی ،جس کی وجہ سے اسکی موت واقع ہوئی۔
    (کہانی میں ٹوِسٹ ابھی باقی ہے)

    عدالت میں بوڑھے شوہر پر غیر ارادی طور پر قتل کا مقدمہ چلا لیکن وہ اس بات پر اصرار کرتا رہا کہ وہ میاں بیوی ہر وقت لڑتے رہتے ہیں اور وہ ہر وقت اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں بھی دیتا ہے لیکن پستول ہر وقت فارغ ہی رہتا ہے اسمیں گولیاں نہیں ہوتیں۔
    مزید تحقیقات کرنے پر عجیب بات یہ معلوم ہوئی کہ بوڑھے جوڑے کے رشتہ داروں میں سے کسی نے ایک ہفتہ قبل ان میاں بیوی کے بیٹے کو پستول میں گولیاں ڈالتے دیکھا تھا ۔ وجہ اسکی یہ تھی کہ ماں نے بیٹے کو مالی امداد دینے سے منع کر دیا تھا۔ تو بیٹے نے بوڑھے ماں باپ سے جان چھڑانے کی سوجھی۔ وہ جانتا تھا کہ اس کے والدین ہر وقت لڑتے رہتے ہیں اور لڑتے ہوئے وہ خالی پستول ماں پر تھان لیتا ہے اسلیئے اس نے پستول میں گولی لوڈ کی تاکہ وہ ایک تیر سے دو شکار کرے۔
    لیکن گولی اسکی ماں کو نہ لگی اور وہ رونالڈ کے سر میں اسوقت لگی جب وہ خودکشی کر رہا تھا۔ اور اسطرح قتل کی تہمت کا مقدمہ باپ سے ہٹ کر بیٹے پر جا لگا۔
    (حیران ہو گئے۔۔ عقل گھوم گئی۔۔ اچھا اب میرے ساتھ کہانی پر نظر رکھو)
    ساری واقعے میں سب سے عجیب بات یہ کہ رونالڈ بذات خود ان دونوں بوڑھے میاں بیوی کا بیٹا تھا اور اس نے ہی پستول میں گولی ڈالی تھی تاکہ وہ اپنے ماں باپ سے خلاصی پا سکے۔
    لیکن مالی حالات خراب ہونے اور باپ کا اسکی ماں کو مارنے میں تاخیر کرنے کی وجہ سے اس نے خودکشی کا فیصلہ کیا اور اوپری منزل سے چھلانگ لگاتے ہوئے وہی گولی اسکو لگی جو اس نے خود پستول میں ڈالی تھی اس طرح وہ بذات خود قاتل بھی ہوا اور مقتول بھی۔

    پوسٹ پسند نہیں آ ئی تو پوسٹ کو چھوڑ کر چپ چاپ آ گے بڑھ جائیے ۔۔۔ پسند آ ئی ہو تو حوصلہ افزائی کیلئے اچھا کمنٹ کیجئے[/QU

    thanks for sharing

Similar Threads

  1. Students Interested in IT knowledge specially DIT students
    By Sher Zada in forum General Discussion
    Replies: 3
    Last Post: 4th April 2018, 01:36 PM

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •